What happened in Murree?

What happened in Murree?

روس کے علاقے سائبیریا میں یاکو ستک (Yakotsk) نام کا ایک ریجن ہے‘ اس میں تین لاکھ لوگ رہتے ہیں اور یہ دنیا کی سرد ترین آبادی ہے‘ سردیوں میں اس کا درجہ حرارت پچاس ڈگری تک گر جاتا ہے

مری میں کیا ہوا

‘یاکوستک کا ایک گائوں اومیا کون (Omyakon) دنیا کا سرد ترین گائوں ہے‘ اس کا درجہ حرارت منفی 71 اعشاریہ پانچ سینٹی گریڈ تک بھی چلا جاتا ہے‘سردیوں کے عام دنوں میں بھی اس کا ٹمپریچر منفی 47 ڈگری سینٹی گریڈ ہوتا ہے اور یہ درجہ حرارت اس حد تک کم ہے کہ لوگوں کا لعاب دہن تک منہ میں جم جاتا ہے اور یہ بات تک کرنے کے قابل نہیں رہتے‘

آنکھوں کا پانی پتلیوں میں جم جاتا ہے اور ڈیڑھ منٹ باہر نکلنے کے بعد جسم کے حصے سنو بائٹ کی وجہ سے جھڑنے لگتے ہیں‘ لوگ ساری سردیاں اپنی گاڑیاں سٹارٹ رکھتے ہیں‘ کیوں؟ کیوں کہ گاڑی اگر ایک بار بند ہو جائے تو یہ پھر دوبارہ سٹارٹ نہیں ہوتی‘ انجن سیز ہو جاتا ہے‘ بیٹری جم جاتی ہے اور ریڈی ایٹر پھٹ جاتا ہے‘ لوگ گھروں میں واش رومز نہیں بنا سکتے‘ کیوں؟ کیوں کہ بول وبراز جم جاتا ہے اور یہ پائپس کے ذریعے باہر نہیں نکل پاتا‘ ریجن میں اموات کے بعد قبر کھودنا مشکل ترین کام ہوتا ہے‘

پورا گائوں مل کر پہلے قبر کی جگہ پر آگ جلاتا ہے‘ سات آٹھ دن کی آگ کے بعد وہ جگہ نرم ہوتی ہے اور پھر درجنوں لوگ مل کر ایک ایک انچ زمین کھودتے ہیں اور اس کے بعد سوگ کا عمل شروع ہوتا ہے‘ لوگ مُردہ دفن کرنے سے پہلے قبر میں آگ جلا کر اسے گرم رکھتے ہیں‘ کیوں؟ کیوں کہ مُردے کی تدفین سے قبل قبر برف سے اٹ جاتی ہے اور یہ برف صرف برف نہیں ہوتی یہ چٹان سے زیادہ مضبوط ہوتی ہے‘

اسے توڑنا ممکن نہیں ہوتا لہٰذا یہ لوگ قبر میں آگ جلا کر رکھتے ہیں‘ ریجن میں موبائل فون اور انٹرنیٹ کی سہولت ممکن نہیں‘کیوں؟ کیوں کہ سگنل بھی جیم ہو جاتے ہیں اور موبائل کی بیٹریاں بھی کام نہیں کرتیں‘ کیمرے سے تصویر بنانا بھی آسان نہیں ہوتا‘ کیوں؟ کیوں کہ لینز اور شٹر کے اندر آکسیجن جم جاتی ہے اور یہ موو نہیں ہوتے لیکن آپ انسان کا کمال دیکھیے‘ اس ریجن میں بھی سیکڑوں ہزاروں سال سے لائف چل رہی ہے‘

سڑکیں بھی موجود ہیں‘ مارکیٹیں بھی ہیں‘ ریستوران اور بارز بھی ہیں‘ سرکاری دفاتر بھی ہیں اور سکول بھی اور یہ سب اس ایکسٹریم ویدر میں بھی رواں دواں ہیں‘ اومیا کون میں سکول صرف اس وقت بند ہوتے ہیں جب گائوں کا درجہ حرارت منفی 55 ڈگری ہو جاتا ہے ورنہ اس سے قبل

سکول اور دفتر دونوں کھلے رہتے ہیں اور لوگ اور بچے حاضر بھی ہوتے ہیں‘ ان لوگوں کے لیے سردیوں کا موسم آئیڈیل بھی ہوتا ہے‘ کیوں؟ کیوں کہ راستے کے تمام دریا اور جھیلیں جم جاتی ہیں ‘ یہ سڑکیں بھی بن جاتی ہیں اور ان پر ٹرک چل کر پورے علاقے کے لیے سال بھر کی خوراک اور ایندھن کا بندوبست کر دیتے ہیں جب کہ گرمیوں میں درمیان میں دریا اور جھیلیں حائل ہو جاتی ہیں اور یہ علاقے کو باقی روس سے کاٹ دیتی ہیں۔

آپ اس علاقے کی تاریخ اور جغرافیہ دیکھ لیں‘ آپ یہ دیکھ کر حیران رہ جائیں گے اس پورے علاقے میں منفی 71 ڈگری سینٹی گریڈ پر بھی کسی دور میں 23 لوگ نہیں مرے جب کہ ہم نے مری سے منفی دو سینٹی گریڈ پر8جنوری کو 23 لاشیں اٹھائیں‘ کیوں؟ مری اور اومیا کون میں اتنا فرق کیوں ہے؟ آپ نے سوچا؟ یہ یاد رکھیں دنیا میں موسم ایشو نہیں ہوتا‘ موسم کی تیاری ایشو ہوتی ہے‘

آپ اگر سردی یا گرمی کا مقابلہ کرنے کے لیے تیار ہیں تو پھر کوئی مسئلہ نہیں اور آپ نے اگر ذہنی اور جسمانی طور پر تیاری نہیں کی تو پھر آپ لاہور‘ راولپنڈی اور اسلام آباد میں بھی سردی سے ٹھٹھر کر مر جائیں گے یا کراچی میں ہیٹ سٹروک کا شکار ہو کر دو ہزار مُردوں میں شامل ہو جائیں گے یا پھر سیلاب میں بہہ جائیں گے‘ اصل ایشو تیاری ہے اور میں 87 ملکوں کی سیاحت اور نارتھ پول اور سائوتھ پول کے تجربات سے اس نتیجے پر پہنچا ہوں ہم لوگ تیاری کے معاملے میں بدترین لوگ ہیں‘ دنیا میں لوگ سردی اور گرمی کا چھ ماہ پہلے بندوبست شروع کر دیتے ہیں

جب کہ ہمارے پاس اگلے دن کے لیے ماچس‘ موم بتی اور چائے کی پتی نہیں ہوتی لہٰذا یہ واقعہ تیاری کی کمی کی بدترین مثال ہے‘ مری کا واقعہ افسوس ناک بلکہ عبرت ناک ہے لیکن سوال یہ ہے جس قوم نے مشرقی پاکستان کے سانحے سے کچھ نہیں سیکھا وہ مری کے واقعے سے کیا سیکھے گی لیکن میں اس کے باوجود وِسل بجانا اپنا فرض سمجھتا ہوں ‘ میری بات کوئی سنے یا نہ سنے لیکن میں ٹین ڈبہ ضرور بجائوں گا‘ ہو سکتا ہے

کوئی ایک کان یا کوئی ایک ضمیر زندہ ہو اور یہ اپنے لیے یا دوسروں کے لیے کوئی پالیسی بنا لے‘ شاید کسی ایک شخص کی وجہ سے کوئی ایک خاندان بچ جائے۔ سانحہ مری کے تین ذمہ دار ہیں‘ سیاح‘ مری کے لوگ اور حکومت‘ہم سب سے پہلے سیاحوں کی کوتاہیاں ڈسکس کرتے ہیں‘ ہمیں ماننا ہوگا ہماری آبادی کا نوے فیصد حصہ گرم علاقوں سے تعلق رکھتا ہے‘

ہم برف اور پہاڑی علاقوں کے ایشوز سے سرے سے واقف نہیں ہیں‘ پاکستان میں پچھلے بیس برسوں میں سڑکوں کا جال بچھ گیا اور لوگوں کے پاس گاڑیاں بھی آ گئیں لیکن قوم ابھی ذہنی طور پر گاڑیوں اور سڑکوں کے قابل نہیں ہوئی چناں چہ لوگ اچانک پورے خاندان کو گاڑیوں میں ٹھونستے ہیں اور کسی تیاری اور انفارمیشن کے بغیر مری‘ کاغان‘ سوات اور گلگت بلتستان کی طرف نکل جاتے ہیں اور گرمی ہو یا سردی کسی نہ کسی آفت کا شکار ہو جاتے ہیں‘ میرا ہر ویک اینڈ مری میں گزرتا ہے

لہٰذا میں سات برسوں سے لوگوں کو بچوں سمیت سڑکوں پر خوار ہوتا دیکھ رہا ہوں‘ لوگ سلیپر‘ کھلے جوتوں اور ہلکے پھلکے کپڑوں میں چھوٹی گاڑیوں اور ویگنوں میں سوار ہوتے ہیں اور جگہ جگہ پھنستے اور دھنستے چلے جاتے ہیں‘ بچے سڑکوں پر رو رہے ہوتے ہیں‘ خواتین قے کر رہی ہوتی ہیں اور بزرگ سر پکڑ کر کناروں پر بیٹھے ہوتے ہیں چناں چہ میں اس سانحے کا سب سے بڑا ذمہ دار عام لوگوں کو سمجھتا ہوں‘

آپ خود سوچیے جس شہر میں صرف اڑھائی تین ہزار گاڑیوں کی پارکنگ ہو اس میں اچانک لاکھ گاڑیاں آ جائیں گی اور شہر میں صرف دو ہزار کمرے ہوں گے اور وہاں چار لاکھ لوگ آ جائیں گے تو اس شہر کا کیا بنے گا؟ یہ اتنے لوگوں کی کیسے ٹیک کیئر کرے گا؟ دوسرا برف کا ایک پروٹو کول ہوتا ہے‘ آپ کے پاس جب تک فور بائی فور جیپ نہ ہو یا گاڑی کے چاروں پہیوں پر زنجیر نہ چڑھی ہو‘

آپ کے پاس اضافی پٹرول‘ برف ہٹانے کے لیے بیلچہ‘ دو دن کی تیار خوراک‘ پانی ‘ دودھ‘ کمبل‘ واٹر پروف جیکٹس‘ اونی ٹوپیاں‘ مفلر‘ دو دو سویٹر‘ واٹر پروف دستانے‘ واٹر پروف اینٹی سلیپری لانگ شوز‘ ٹارچ اور ٹریکنگ سٹکس نہ ہوں آپ کو کسی قیمت پر برفانی علاقے کا رخ نہیں کرنا چاہیے بالخصوص اس وقت جب آپ کے ساتھ بارہ سال سے کم عمر بچے یا ستر سال سے بڑے بزرگ بھی ہوں‘ تیسری بات ویک اینڈز یا چھٹیوں کے دن برفانی علاقوں یا سیاحتی مقامات کی وزٹ کے لیے بدترین دن ہوتے ہیں‘

کسی سمجھ دار شخص کو ان دنوں میں فیملی کے ساتھ کسی سیاحتی مقام کا رخ نہیں کرنا چاہیے اور آپ کو اگر زیادہ ہی شوق ہو تو پھر کمرے‘ ہوٹل اور باقی ضروریات کا بندوبست کریں اور پھر گھر سے نکلیں ورنہ یہ سیدھی سادی خودکشی ہو گی‘چوتھی بات برسات کے موسم میں بھی پہاڑی علاقوں میں ہرگز نہ جائیں‘ بارش میں دنیا کے تمام پہاڑی علاقوں میں لینڈ سلائیڈنگ ہوتی ہے اور پہاڑی تودے اور چٹانیں گرنے سے ہر سال سیکڑوں خاندان دنیا سے رخصت ہو جاتے ہیں‘ گاڑیاں بھی ہفتہ ہفتہ لینڈ سلائیڈنگ میں پھنسی رہتی ہیں‘

آپ اس پروٹوکول کو بھی پلے باندھ لیں اورپانچویں بات آپ اگر برف باری میں پھنس گئے ہیں تو گاڑی میں محصور نہ رہیں‘ گاڑی سائیڈ پر لگائیں اور خاندان کو لے کر پیدل نکل جائیں اور آپ کو جہاں بھی پناہ ملتی ہے آپ فوراً لے لیں‘ گاڑی کی قربانی دے دیں لیکن اپنے آپ اور خاندان کو بچا لیں اور یہ اگر ممکن نہ ہو تو ہر پندرہ منٹ بعد گاڑی سے اتر کر اس کے تمام دروازوں کی سائیڈز اور سائیلنسر سے برف ہٹا دیں ورنہ دروازوں کے باہر برف جمع ہو جائے گی‘ یہ مکمل بند ہو جائیں گے اور آپ گاڑی سے باہر نہیں نکل سکیں گے‘

یہ بھی یاد رکھیں مسلسل ہیٹر چلنے سے گاڑی کے اندر آکسیجن کم ہو جاتی ہے اور اگر اس دوران سائیلنسر کے سامنے برف جمع ہو جائے تو کاربن مونو آکسائیڈ واپس گاڑی کے اندر آ جاتی ہے اور یہ گیس خاموش قاتل ہے‘ اس کی بو یا ذائقہ نہیں ہوتا‘ یہ جب آتی ہے تو گاڑی میں موجود لوگوں کو محسوس ہوتا ہے ہمیں نیند آ رہی ہے جب کہ یہ بڑی تیزی سے موت کی وادی میں گر رہے ہوتے ہیں لہٰذا گاڑی کا ہیٹر چلائیں تو شیشے ہلکے سے نیچے ضرور رکھیں

اور اگر برف میں پھنس جائیں تو ہر دس پندرہ منٹ بعد نیچے اتر کر دروازوں کے ساتھ ساتھ سائیلنسر کے سامنے سے بھی برف ہٹاتے رہیں اور آخری بات آپ جہاں بھی جا رہے ہیں خدا کے لیے جانے سے پہلے موسم کا حال ضرور جان لیا کریں‘ گوگل نے موسم کو اب راز نہیں رہنے دیا‘ یہ آپ کو منٹ بائی منٹ کا حساب بھی دے دیتا ہے‘آپ یہ حساب ضرور دیکھ لیا کریں‘

آپ کو اگر راستے میں پولیس یا انتظامیہ بھی روکے تو اسے قدرت کی طرف سے اشارہ سمجھ کر رک جایا کریں‘ آپ جب ضد کرتے ہیں تو یہ ضد آپ اور آپ کے خاندان کی جان لے لیتی ہے‘ مجھے اللہ تعالیٰ نے مری میں بہت اچھا گھر دے رکھا ہے لیکن میں درجنوں مرتبہ راستے سے واپس آیا ہوں‘ مجھے اگر مری پہنچ کر بھی رش محسوس ہو تو میں چپ چاپ واپس آ جاتا ہوں یا گاڑی سائیڈ پر لگا کر پیدل گھر چلا جاتا ہوں‘ کیوں؟ کیوں کہ میں سمجھتا ہوں دنیا میں قدرت کے اشاروں سے ٹکرانے سے بڑی بدبختی کوئی نہیں ہوتی۔

What happened in Murree?

Omyakon, a village in Yakutsk, is the coldest village in the world. Its temperature can reach minus 71.5 degrees Celsius. Even on a typical winter day its temperature is minus 47 degrees Celsius. What happened in Murree The temperature is so low that people’s saliva freezes in their mouths until combustion and they are unable to do so What happened in Murree

Tears freeze in the skin and after going out for a minute and a half, body parts start falling off due to snow bite. What happened in Murree People start their cars all winter. Why? Because once the car is stopped, it does not start again, the engine stops, the battery freezes and the radiator explodes, people cannot build washrooms in their homes, why? What happened in Murree

Because it freezes and can’t get out through the pipes, “digging graves is the hardest thing in the region after death.” The whole village burns together at the site of the first tomb. After seven or eight days the place becomes soft and then dozens of people dig one inch at a time and then the process of mourning begins. People are dead. Before burial, they light a fire in the grave and keep it warm. Why? Because before the burial of the dead, the grave is covered with snow and this snow is not just snow, it is stronger than rock.

It is not possible to break it, so these people keep burning fire in the grave. Mobile phone and internet facility is not possible in the region. Why? Because the signals also get jammed and the batteries of the mobile phone do not work. It is not easy to take a picture with the camera. Why? Because the oxygen inside the lenses and shutters freezes and they do not move,

but you see the beauty of man. Life has been going on in this region for hundreds of thousands of years. What happened in Murree There are roads, there are markets, What happened in Murree there are restaurants and bars, there are government offices and schools and all this is going on in this extreme weather. 55 degrees, otherwise before that

Both the school and the office are open and people and children are also present. Winter is also ideal for these people. Why? Because all the rivers and lakes along the way freeze, What happened in Murree these roads also become and trucks run on them to provide year-round food and fuel for the whole area while in summer there are rivers and lakes in between. And cut off the region from the rest of Russia.

Take a look at the history and geography of the area. What happened in Murree You will be amazed to see that 23 people did not die in any period in this whole area even at minus 71 degrees Celsius while we found 23 bodies on January 8 at minus 2 degrees Celsius from Murree. Why? Why is there such a difference between Murree and Omiya? You thought Remember that weather is not an issue in the world, weather preparation is an issue.

If you are ready to face cold or heat then no problem and if you are not mentally and physically prepared then you will die of cold in Lahore, Rawalpindi and Islamabad or in Karachi. The real issue is preparation and I have come to this conclusion from the tourism of 87 countries and the experiences of North Pole and South Pole. We are preparing for it. They are the worst people in the world. People in the world start arranging cold and heat six months in advance.

While we don’t have matches, candles and tea leaves for the next day, this incident is the worst example of lack of preparation. Murree incident is sad but instructive but the question is which nation I don’t know what she will learn from the Murree incident but I still consider it my duty to play the whistle. No one listens to me but I will definitely play the tan box. And if he makes a policy for himself or for others, maybe one family will survive because of one person.

The three culprits of the Murree tragedy are the tourists, the people of Murree and the government. We are the first to discuss the shortcomings of the tourists. In the last twenty years, Pakistan has had a network of roads and people have got cars, but the nation is not yet mentally fit for cars and roads, so people suddenly push the whole family into cars. And without any preparation and information, Murree, Kagan, go to Swat and Gilgit-Baltistan and suffer from some kind of calamity whether it is hot or cold. I spend every weekend in Murree.

So for seven years now I’ve been seeing people, including children, being humiliated on the streets, people in sleepers, in open shoes and light clothes, riding in small cars and wagons, and getting stuck and drowning here and there, children crying on the streets. “Women are vomiting and the elderly are sitting on the sidelines holding their heads,

so I hold ordinary people responsible for this tragedy,” he said. Suddenly a million vehicles will come in and there will be only two thousand rooms in the city and four lakh people will come there, so what will happen to this city? How will it take care of so many people? The second is a protocol of ice.

Unless you have a four-by-four jeep or a chain on all four wheels of the vehicle, you have extra gasoline, a shovel to clear the snow, two days’ worth of food, water. No milk, blankets, waterproof jackets, fleece hats, mufflers, two sweaters, waterproof gloves, waterproof anti-sleeper long shoes, flashlights and trekking sticks. When you have a child under the age of twelve or an elderly person over the age of seventy, the third thing is that weekends or holidays are the worst days to visit the snowy places or tourist places.

A sensible person should not go to a tourist destination with family these days and if you are too fond then arrange room, hotel and other necessities and then leave the house otherwise it will be straightforward suicide. The fourth thing is never to go to the mountains even in the rainy season. Rain causes landslides in all the mountainous areas of the world and hundreds of families leave the world every year due to landslides and cliffs. Stuck in sliding ‘

You should also adhere to this protocol and fifthly, if you are stuck in a snowstorm, do not get stuck in the car. Sacrifice the car but save yourself and your family and if this is not possible then get out of the car every fifteen minutes and remove the snow from all the side sides and silencer of the door or else snow will accumulate outside the doors. What happened in Murree It will be completely closed and you will not be able to get out of the car.

Also keep in mind that constant running of the heater reduces the oxygen inside the vehicle and if ice accumulates in front of the silencer during this time carbon monoxide comes back inside the vehicle and this gas is a silent killer, its smell or taste. It doesn’t happen. When it arrives, the people in the car feel we are falling asleep. They are falling into the valley of death very fast. If I get stuck, go down every ten to fifteen minutes and keep removing snow from the doors as well as the front of the silencer.

And last but not least, wherever you are going, before you go for God’s sake, you must know the weather. What happened in Murree Google has not kept the weather a secret anymore. What happened in Murree See, even if the police or the administration stop you on the way, What happened in Murree stop it as a sign from nature. When you are stubborn, this stubbornness kills you and your family.

I have a very nice house in Murree but I have come back from the road dozens of times. What happened in Murree If I feel rushed even after reaching Murree, What happened in Murree I come back quietly or put the car on the side and walk home. Why? Because I think there is no greater misfortune in the world than to be struck by the signs of nature.

Read More:: Strict laws issued against those going on Hajj without permit

Author: Ayesha KhanI am here! providing you latest News| Technology News |Trending Latest News Updates

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *