What preparation is required before snow tourism

What preparation is required before snow tourism

The valleys and mountains of the northern regions of Pakistan were covered with a white blanket of snow. What preparation is required before snow tourism Traveling to snowy areas alone, with friends or family, has also been a problem with recreation. For those who are fond of winter tourism, the Meteorological Department reports that the second snowfall in the upper parts of Pakistan may continue for a few more days.

Talking to Urdu News, Ghulam Murtaza, Deputy Director, Meteorological Department, said that the recent snowfall would continue till Sunday. He said that in the first spell, nine to 12 inches of snow had fallen in the upper parts of the country including Murree, this time the level is likely to go above one foot. This can lead to landslides, roadblocks and other problems in many areas. What preparation is required before snow tourism

A new series of snowfall will continue from Mansehra and Dir, Swat Chitral to Gilgit-Baltistan. What preparation is required before snow tourism What can winter tourism enthusiasts do to protect themselves and their loved ones from medical and other problems during snowfall?

What precautions should be taken during winter touring?

SPO Haroon Anwar of the police force responsible for keeping traffic flowing on the Murree route said there were clear instructions for those heading to the area for tourism, including staff at toll plazas. Briefs about them. Haroon Anwar said that it is best not to go to bad areas as soon as the snowfall starts or during it. What preparation is required before snow tourism If you have to go during this time, try not to go with your family.

He said that while traveling, one should make sure that the tires of the vehicle are in good condition, reach the snowy areas and keep the air pressure in the tires below normal. Chains should be placed on warm clothes and tires. What preparation is required before snow tourism Drive in small gears while driving and do not use the brakes if your vehicle slips.

In the upper areas, sometimes due to landslides or traffic jams, it may be time to spend a lot of time in the car. It is also useful to keep the vehicle’s fuel tank full, carry extra tires, tools needed for replacement in the event of a tire puncture, and the presence of a small battery-powered pump to fill the air when traveling in mountainous areas.


Get acquainted (gain, obtain) with present-day traffic maps of the area you are visiting on Google Maps or the relevant channels of the traffic police. According to Haroon Anwar, the roads leading to Murree are open at the moment, but due to the presence of heavy vehicles in the hinterland, there could be a traffic jam.

What medical precautions are necessary during winter tourism?

Experiencing the new weather sometimes during a trip to the cold upper regions can also lead to health problems. The problem is, how do you do all this cool stuff and keep up the good content? Talking to Urdu News, Dr. Asif Tauseef, a family physician from Islamabad, said that young children and elders should not be taken to snowy areas.

He said that blankets and extra socks should be kept with warm clothes while traveling. Somewhere along the way, if you have to be confined to a car for hours due to traffic jams, if you have to walk and have a blanket, then extra socks can save you from getting sick.What preparation is required before snow tourism

According to Dr. Asif Tauseef, instead of ordinary shoes, special rubber shoes should be used while facing the upper areas. And to avoid slipping. To cope with the minor ailments caused by the cold weather, the physician who recommends taking Panadol and Vaux together and using them

when needed, said that since dengue and corona epidemic are rampant these days, try Do not take ibuprofen if you feel pain, it may cause bleeding. What preparation is required before snow tourism He said that despite the initial precautions, if you have a health problem, keep in touch with your family physician or call 1122 for emergency medical services.

Read More:: Gold prices in Pakistan remain unchanged 2022

برفباری میں سیاحت سے قبل کون سی تیاری لازمی ہے؟

پاکستان کے شمالی علاقہ جات کی وادیوں اور پہاڑوں نے برف کی سفید چادر اوڑھی تو کوئی چھٹیوں سے محظوظ ہونے کے لیے سفر پر نکلا اور کسی نے سوشل ٹائم لائنز پر برفباری کی تصاویر دیکھ کر ان علاقوں کا رخ کیا۔ ایسے میں اکیلے، دوستوں یا اہلخانہ کے ساتھ برفباری والے علاقوں کی سیاحت تفریح کے ساتھ کچھ مسائل کا باعث بھی رہی ہے۔ ونٹر ٹوورازم کے دلدادہ افراد کے لیے محکمہ موسمیات کی یہ اطلاع بھی قابل توجہ ہے کہ پاکستان کے بالائی علاقوں میں برفباری کا دوسرا سلسلہ مزید چند روز تک جاری رہ سکتا ہے۔

اردو نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے محکمہ موسمیات کے ڈپٹی ڈائریکٹر فورکارسٹنگ غلام مرتضیٰ کا کہنا ہے کہ برفباری کا حالیہ سلسلہ اتوار تک جاری رہے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ پہلے سپیل میں مری سمیت ملک کے بالائی علاقوں میں نو تا 12 انچ برفباری ہوئی تھی، اس مرتبہ یہ سطح ایک فٹ سے اوپر جانے کا امکان موجود ہے۔ جس کی وجہ سے متعدد علاقوں میں لینڈ سلائیڈنگ، سڑکیں بلاک ہونے جیسے مسائل پیش آ سکتے ہیں۔

غلام مرتضیٰ کے مطابق مری، ایبٹ آباد، مانسہرہ اور دیر، سوات چترال سے لے کر گلگت بلتستان تک برفباری کا نیا سلسلہ جاری رہے گا۔ برفباری کے دوران ونٹر ٹوورازم کے دلدادہ افراد خود کو اور اپنے پیاروں کو طبی اور دیگر مسائل سے بچنے کے لیے کیا کر سکتے ہیں۔

ونٹر ٹووورازم کے دوران کیا احتیاط کی جائے؟

مری کے راستے میں ٹریفک کو رواں دواں رکھنے کے ذمہ دار پولیس دستے سے وابستہ ایس پی او ہارون انور کہتے ہیں کہ سیاحت کی خاطر ان علاقوں کا رخ کرنے والوں کے لیے واضح ہدایات موجود ہیں، ٹول پلازوں پر موجود سٹاف بھی وہاں سے گزرنے والوں کو ان سے متعلق بریف کرتا ہے۔ ہارون انور کا کہنا تھا کہ سب سے بہتر ہے کہ برفباری شروع ہوتے ہی یا اس کے دوران بلائی علاقوں کا رخ نہ کیا جائے۔ اگر اس دوران جانا ہو تو کوشش کریں کہ فیملی کے ہمراہ نہ جائیں۔

ان کا کہنا تھا کہ سفر پر نکلتے ہوئے یقینی بنایا جائے کہ گاڑی کے ٹائر درست حالت میں ہوں، برفباری والے علاقوں میں پہنچ کر ٹائروں میں ہوا کا دباؤ معمول سے کم رکھا جائے۔ گرم کپڑے اور ٹائروں پر چڑھانے کے لیے چین ساتھ رکھی جائے۔ ڈرائیوںگ کے دوران گاڑی چھوٹے گیروں میں چلائی جائے اور اگر آپ کی گاڑی سلپ ہو تو بریک کا استعمال نہ کیا جائے۔

بالائی علاقوں میں بعض اوقات لینڈسلائیڈنگ یا ٹریفک جام کی وجہ سے بہت زیادہ وقت گاڑی میں گزارنے کی نوبت بھی آ سکتی ہے، ایسے کیفیت میں پریشانی سے بچنے کے لیے بہتر ہے کہ گرم لباس کے علاوہ کمبل یا گرم چادریں بھی ہمراہ رکھی جائیں۔ پہاڑی علاقوں میں جاتے ہوئے گاڑی کا فیول ٹینک فل رکھنا، اضافی ٹائر ہمراہ رکھنا، ٹائر پنکچر ہونے کی صورت میں تبدیلی کے لیے درکار اوزار اور ہوا بھرنے کے لیے گاڑی کی بیٹری سے چلنے والے چھوٹے پمپ کی موجودگی بھی مفید ہے۔

جس علاقے میں جا رہے ہوں گوگل میپ یا ٹریفک پولیس کے متعلقہ چینلز پر وہاں کی ٹریفک کی صورتحال، راستوں کے کھلے اور بند ہونے کی کیفیت سے آگاہی حاصل کر لی جائے۔ ہارون انور کے مطابق اس وقت مری کی جانب جانے والے راستے کھلے ہیں تاہم اندرونی علاقے میں بہت زیادہ گاڑیوں کی موجودگی کی وجہ سے ٹریفک جام جیسی صورتحال ہو سکتی ہے۔

ونٹرٹوورازم کے دوران کون سی طبی احتیاطیں ضروری ہیں؟

ٹھنڈے بالائی علاقوں کی سیر کے دوران بعض اوقات نئے موسم کا سامنا کرنا طبیعت کی خرابی کا باعث بھی بنتا ہے۔ ایسے میں پریشانی یہ ہوتی ہے کہ خود کو بیماری سے بچا کر تفریح کا مزا کرکرا کرنے سے کیسے روکا جائے؟ اردو نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے اسلام آباد سے تعلق رکھنے والے فیملی فزیشن ڈاکٹر آصف توصیف کا کہنا تھا کہ چھوٹے بچے اور بزرگوں کو برفباری والے علاقوں میں نہ لے کر جایا جائے۔ ان کا کہنا تھا کہ سفر پر نکلتے ہوئے اپنے ہمراہ گرم کپڑوں کے ساتھ کمبل اور اضافی موزے بھی ضرور رکھے جائیں۔

راستے میں کسی جگہ اگر ٹریفک جام کی وجہ سے گھنٹوں گاڑی تک محدود ہونا پڑے تو کمبل اور پیدل چلنا پڑے تو اضافے موزے طبیعت کی خرابی سے بچا سکتے ہیں۔ ڈاکٹر آصف توصیف کے مطابق بالائی علاقوں کا رخ کرتے ہوئے عام جوتوں کے بجائے ربرسول والے مخصوص جوتے استعمال کیے جائیں، اگر عام جوتے استعمال کر رہے ہوں تو ان پر پلاسٹک کی تھیلی چڑھا کر اوپر موزا لپیٹ لیں تاکہ پانی جوتے کے اندر داخل نہ ہو اور پھسلنے سے بھی بچا جا سکے۔

سرد موسم کی وجہ سے طبیعت کی معمولی خرابی سے نمٹنے کے لیے پیناڈول اور وکس وغیرہ ساتھ رکھنے اور ضرورت پڑنے پر استعمال کرنے کی تجویز دینے والے معالج کا کہنا تھا کہ چونکہ ان دنوں ڈینگی اور کورونا وبا کا زور ہے، اس لیے کوشش کریں کہ درد کی شکایت محسوس ہونے پر بروفن نہ لیں، اس سے خون جاری ہونے کی شکایت ہو سکتی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ابتدائی احتیاطوں کے باوجود طبیعت کی خرابی کی شکایت ہو تو اپنے فیملی فزیشن سے رابطے میں رہیں یا 1122 پر کال کر ہنگامی طبی خدمات حاصل کریں۔ 

Author: Ayesha KhanI am here! providing you latest News| Technology News |Trending Latest News Updates

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *