Outbreak of Omicron in Pakistan, triple the number of cases: Asad Umar

Outbreak of Omicron in Pakistan

Federal Minister for Planning Asad Umar has said that Omi Crown variant of Corona virus has started spreading rapidly in Pakistan, Outbreak of Omicron in Pakistanthe rate of positive cases has reached 1.8. Addressing a press conference in Islamabad on Wednesday, Asad Omar said that Omi should not be under the misconception that it is not more deadly.

Deadly. Outbreak of Omicron in Pakistan He urged the Pakistani people to get vaccinated immediately if for any reason. Evidence has also been found in Pakistan that Omicron has been found in children between the ages of twelve, fourteen and fifteen.

He said there was clear evidence that a new wave of corona had arrived in Pakistan, with the number of cases tripling from 0.7 to 1.8 per cent. The Federal Minister said that people living in big cities and densely populated areas are most at risk from Omicron and the highest number of Corona cases have been seen there.

Referring to the statistics of the last seven days, he said that 60 per cent of the corona cases reported across the country were from Lahore and Karachi. He directed that the vaccine be given immediately and those whose first dose is four weeks old should be given the second dose immediately.

He said that in the last two weeks, there has been an increase of 166% in Corona cases in Sindh province but in the same period, there has been an increase of 940% in Omi Crown cases in Karachi. Outbreak of Omicron in Pakistan In the last ten to twelve days, the number of cases of Omicron has increased by 190% in Punjab while it has also increased by 193% in Lahore.

He said that the evidence obtained from all the countries of the world shows that the cases of Omi Kron are going to increase rapidly in Pakistan also in the coming days. Citing the example of South Africa, he said that in the last four weeks there has been a 3500 per cent increase in cases of Omi Crown and an increase of 700 per cent in hospital admissions.

In the United States, the incidence of Omi Crown increased by 400%, and hospital admissions in the United States increased by 92%. Outbreak of Omicron in PakistanEvidence from various countries indicates that the risk is lower in areas where the number of vaccinated individuals is high.

Read More:: Pakistan’s Economy: Despite the increase in domestic exports, what could be the negative impact of 100% increase in trade deficit on the economy?

پاکستان میں اومی کرون کا پھیلاؤ، کیسز میں تین گنا اضافہ: اسد عمر

وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی اسد عمر نے کہا ہے کہ کورونا وائرس کا اومی کرون ویریئنٹ پاکستان میں تیزی سے پھیلنا شروع ہو گیا ہے، مثبت کیسز کی شرح 1.8 ہو گئی ہے۔ بدھ کو اسلام آباد میں پریس کانفرنس سے خطاب میں اسد عمر نے کہا کہ اومی کرون کے حوالے سے اس غلط فہمی میں نہ رہیں کہ یہ زیادہ مہلک نہیں ہے۔

انہوں نے پاکستانی عوام پر زور دیا کہ اگر کسی وجہ سے ویکسین نہیں لگوائی تو فوری طور پر لگوائیں۔ پاکستان میں بھی شواہد ملے ہیں کہ بارہ، چودہ اور پندرہ سال کے بچوں میں بھی اومی کرون پایا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ واضح شواہد موجود ہیں کہ پاکستان میں کورونا کی نئی لہر آ گئی ہے، کیسز میں تین گنا اضافہ ہوتے ہوئے مثبت کیسز کی شرح 0.7 سے  1.8 فیصد ہو گئی ہے۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ بڑے شہروں اور گنجان آباد علاقوں میں رہنے والوں کو سب سے زیادہ اومی کرون سے خطرہ لاحق ہے اور سب سے زیادہ کورونا کیسز وہیں نظر آئے ہیں۔

پچھلے سات دنوں کے اعداد و شمار کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ملک بھر میں سامنے آنے والے کورونا کیسز میں سے 60 فیصد لاہور اور کراچی سے ہیں۔ انہوں نے فوری طور پر ویکسین لگوانے کی ہدایت کی اور جن کی پہلی ڈوز کو چار ہفتے ہو گئے ہیں انہیں فوراً دوسری ڈوز لگوانے کا کہا۔

انہوں نے کہا کہ گزشتہ دو ہفتوں میں صوبہ سندھ میں کورونا کیسز میں 166 فیصد کا اضافہ ہوا لیکن اسی عرصے میں کراچی میں اومی کرون کے کیسز میں 940 فیصد اضافہ ہوا ہے۔  پچھلے دس بارہ دنوں کے دوران صوبہ پنجاب میں اومی کرون کے کیسز میں 190 فیصد کا اضافہ ہوا ہے جبکہ لاہور میں بھی 193 فیصد کا اضافہ ہوا۔

انہوں نے کہا کہ دنیا کے تمام ممالک سے ملنے والے شواہد بتاتے ہیں کہ پاکستان میں بھی آئندہ دنوں میں اومی کرون کے کیسز میں تیزی سے اضافہ ہونے والا ہے۔انہوں نے جنوبی افریقہ کی مثال دیتے ہوئے کہا کہ گزشتہ چار ہفتوں میں وہاں اومی کرون کے کیسز میں 35 سو فیصد کے اضافے کے ساتھ ہسپتالوں میں بھی مریضوں کے داخلے کی شرح میں بھی 700 فیصد کا اضافہ ہوا۔

امریکہ میں اومی کرون کے کیسز میں چار سو فیصد کا اضافہ ہوا اور امریکہ کے ہسپتالوں میں داخلے کی شرح میں بھی 92 فیصد کا اضافہ ہوا۔مختلف ممالک سے ملنے والے شواہد سے معلوم ہوتا ہے کہ جن علاقوں میں ویکسین یافتہ افراد کی تعداد زیادہ ہے وہاں خطرہ کم ہے۔

Author: Ayesha KhanI am here! providing you latest News| Technology News |Trending Latest News Updates

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *