My ship can go anywhere

پاکستان میں سب سے بڑی اپوزیشن پارٹی کے رہنما خواجہ سعد رفیق کی صاحبزادی کی لاہور میں شادی کے موقع پر اس وقت صورت حال دلچسپ ہوگئی جب صحافیوں نے سابق سپیکر قومی اسمبلی ایاز صادق اور جہانگیر ترین کو روک لیا۔

میرا جہاز تو کسی بھی طرف جاسکتا ہے: جہانگیر ترین

ہلکے پھلکے انداز میں ویڈیو پر ریکارڈ کی گئی گفتگو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ ایاز صادق اور جہانگیر ترین صحافیوں کے سوالات پر مسلسل مسکرا رہے ہیں۔جب صحافی نے پوچھا کہ آپ کیوں مسکرا رہے ہیں؟ تو ایاز صادق بولے کہ ’سوائے عمران خان کے سب ہی مسکرائیں تو اس ملک کے لیے اچھا ہوگا۔‘

جہانگیر ترین نے اس موقع پر خواجہ سعد رفیق کو اپنا بھائی قرار دے دیا۔ انہوں نے کہا کہ ’خواجہ سعد رفیق میرے بھائی ہیں اور اکٹھے فیملی میں رہ چکے ہیں۔ مسلم لیگ ن سے دوستیاں پرانی ہیں اور ایسے ہی چلیں گی۔ ‘جب ایک صحافی نے ان سے سوال کیا کہ کیا جہانگیر ترین کا جہاز کبھی مسلم لیگ ن کی طرف جا سکتا ہے؟ تو انہوں نے جواب دیا کہ میرا جہاز تو کسی بھی طرف جا سکتا ہے۔

مسلم لیگ ن میں شمولیت کے سوال پر جہانگیرترین  مسلسل مسکراتے رہے۔ اس دوران سردار ایاز صادق صحافیوں کو کہتے رہے کہ ان سے مسکرانے کی وجہ پوچھیں۔جہانگیر ترین کے جہاز والے جملے پر ماریہ چوہدری نامی سوشل میڈٰیا صارف نے لکھا کہ ’رہنما پاکستان تحریک انصاف جہانگیر ترین کا جہاز ن لیگ رن وے پر۔‘

شاہد عمران نے پاکستان تحریک انصاف کو ‘ڈوبتی ہوئی کشتی‘ قرار دیتے ہوئے کہا کہ ’جہانگیر ترین کی پرواز نے بھی مسلم لیگ ن کی جانب رخ کرلیا۔‘ گلناز سیدہ نامی صارف نے جہانگرین ترین کے بیان پر سیاسی تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ’جہانگیر ترین نے کچھ بھی نہ کہا اور کہہ بھی گئے۔‘

My ship can go anywhere: Jahangir Tareen

The situation became interesting at the wedding of the daughter of Khawaja Saad Rafique, the leader of the largest opposition party in Pakistan, in Lahore when journalists stopped former National Assembly Speaker Ayaz Sadiq and Jahangir Tareen. In a light-hearted video recorded conversation, it can be seen that Ayaz Sadiq and Jahangir are constantly smiling at the questions of journalists. When the journalist asked why are you smiling? So Ayaz Sadiq said, “If everyone smiles except Imran Khan, it will be good for this country.”

On this occasion, Jahangir Tareen declared Khawaja Saad Rafique as his brother. He said that Khawaja Saad Rafique is my brother and has lived in a family together. Friendships with PML-N are old and will continue like this. ‘When a journalist asked him if Jahangir Tareen’s plane could ever go to PML-N? So he replied that my ship can go anywhere.

Jahangir Tareen kept smiling on the question of joining PML-N. Meanwhile, Sardar Ayaz Sadiq kept telling the journalists to ask him why he was smiling. A social media user named Maria Chaudhry wrote on the sentence of Jahangir Tareen’s plane that “Pakistan Tehreek-e-Insaf (PTI) leader Jahangir Tareen’s plane is on the N-League runway.”

Shahid Imran termed Pakistan Tehreek-e-Insaf (PTI) as a “sinking ship” and said that “Jahangir Tareen’s flight also turned towards PML-N”. A user named Gulnaz Syeda, while making a political comment on Jahangir Tareen’s statement, said that “Jahangir Tareen did not say anything and even said it.”

Read More:: Interesting rituals to welcome snowfall in Baluchistan

Advertisement

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here